اسلامی بہنوں کی نَما ز کا طر یقہ (حنفی )

aurton-ki-namaz


اسلامی بہنوں کی نَماز کا طر یقہ (حنفی)

باوُضُو قِبلہ رُو اِس طرح کھڑی ہوں کہ دونوں پاؤں کے پنجوں میں چار اُنگل کا فاصِلہ رہے اور دونوں ہاتھ کندھوں تک اُٹھائیے اور چادَر سے باہَر نہ نکالئے۔ ہاتھوں کی اُنگلیا ں نہ ملی ہوئی ہوں نہ خوب کھلی بلکہ اپنی حالت پر (NORMAL ) رکھئے اور ہتھیلیاں قبلہ کی طرف ہوں نظر سَجدہ کی جگہ ہو۔ اب جو نَماز پڑھنی ہے اُس کی نیّت یعنی دل میں اس کا پکّا ارادہ کیجئے ساتھ ہی زَبان سے بھی کہہ لیجئے کہ زِیادہ اچھّا ہے ( مَثَلاً نیّت کی میں نے آج کی ظُہر کی چار رَکعت فرض نَماز کی )اب تکبیرِ تَحریمہ یعنی اللہُ اکبر (یعنی اللہ سب سے بڑا ہے) کہتے ہوئے ہاتھ نیچے لائیے اور اُلٹی ہتھیلی سینے پر چھاتی کے نیچے رکھ کر اسکے اُوپر سیدھی ہتھیلی رکھئے۔ اب اِس طرح ثناء پڑھئے:

سُبْحٰنَکَ اللّٰھُمَّ وَ بِحَمْدِکَ وَ تَبَارَکَ اسْمُکَ

پاک ہے تو اے اللہ عَزَّوَجَل اور میں تیری حمد کرتا ہوں، تیرا نام بَرَکت والا ہے

وَتَعَالٰی جَدُّکَ وَ لَآ اِلٰہَ غَیْرُکَ ط

اور تیری عظمت بُلند ہے اور تیرے سوا کوئی معبود نہیں۔

پھر تعوُّذ پڑھئے:

اَعُوْذُ بِاللّٰهِ مِنَ الشَّیْطٰنِ الرَّجِیْم

میں اللہ تعالیٰ کی پناہ میں آتا ہوں شیطان مردود سے

پھر تَسمِیَہ پڑھئے:

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ

اللہ کے نام سے شروع جو بہت مہربان رحمت والا

پھر مکمَّل سورہ فاتحہ پڑھئے:

اَلْحَمْدُ لِلّٰهِ رَبِّ الْعٰلَمِیْنَۙ(۱) الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِۙ(۲) مٰلِكِ یَوْمِ الدِّیْنِؕ(۳) اِیَّاكَ نَعْبُدُ وَ اِیَّاكَ نَسْتَعِیْنُؕ(۴) اِهْدِنَا الصِّرَاطَ الْمُسْتَقِیْمَۙ(۵) صِرَاطَ الَّذِیْنَ اَنْعَمْتَ عَلَیْهِمْ ﴰ غَیْرِ الْمَغْضُوْبِ عَلَیْهِمْ وَ لَا الضَّآلِّیْنَ۠(۷)

ترجمہ کنزالایمان: سب خوبیاں اللہ کو جو مالک سارے جہان والوں کا۔ بہت مہربان رحمت والا، روزِ جزا کا مالِک۔ ہم تجھی کو پوجیں اور تجھی سے مدد چاہیں۔ ہم کو سیدھا راسۃ چلا، راستہ اُن کا جن پر تو نے اِحسان کیا، نہ اُن کا جن پر غَضَب ہوا اور نہ بہکے ہوؤں کا۔

سورہ فاتحہ ختم کر کے آہِستہ سے ’’ اٰمین‘‘ کہئے۔ پھرتین آیات یا ایک بڑی آیت جوتین چھوٹی آیتوں کے برابر ہو یا کوئی سُورت مَثَلاً سورہ اخلاص پڑھئے :

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ

اللہ کے نام سے شروع جو بہت مہربان رحمت والا

قُلْ هُوَ اللّٰهُ اَحَدٌۚ(۱) اَللّٰهُ الصَّمَدُۚ(۲)لَمْ یَلِدْ ﳔ وَ لَمْ یُوْلَدْۙ(۳) وَ لَمْ یَكُنْ لَّهٗ كُفُوًا اَحَدٌ۠(۴)

ترجمہ کنزالایمان: تم فرماؤ وہ اللہ ہے وہ ایک ہے۔ اللہ بے نیاز ہے۔ نہ اُسکی کوئی اولاد اور نہ وہ کسی سے پیدا ہوا اور نہ اُس کے جوڑ کا کوئی۔

اب اللہُ اکبر کہتے ہوئے رُکو ع میں جا ئيے۔رُکو ع میں تھوڑاجھکئے یعنی اتنا کہ گُھٹنوں پر ہاتھ رکھ دیں زَورنہ دیجئے اورگُھٹنوں کو نہ پکڑ یئے اور اُنگلیا ں ملی ہوئی اور پا ؤ ں جُھکے ہو ئے رکھئے مر دوں کی طرح خو ب سیدھے مت کیجئے۔ کم از کم تین با ر رُ کو ع کی تسبیح یعنی سُبْحٰنَ رَبِّیَ الْعَظِیْم (یعنی پاک ہے میرا عظمت والاپروردگار )کہئے ۔ پھر تَسمِیع (تَس ۔مِیع )یعنی سَمِعَ اللہُ لِمَنْ حَمِدَہ ۔( یعنی اللہ عَزَّوَجَلَّ نے اُس کی سُن لی جِس نے اُس کی تعریف کی ) کہتے ہو ئے باِلکل سیدھی کھڑ ی ہوجائیے، اِس کھڑے ہونے کو قَومہ کہتے ہیں۔اِس کے بعد کہئے۔

اَ للّٰھُمَّ رَبَّنَا وَلَکَ الْحَمْد

اے اللہ ! اے ہمارے مالک ! سب خوبیاں تیرے ہی لیے ہیں

پھر اللہُ اکبر کہتے ہوئے اِس طرح سجدے میں جائيے کہ پہلے گُھٹنے زمین پر رکھئے پھِر ہاتھ پھِر دونوں ہاتھوں کے بیچ میں اِس طرح سر رکھئے کہ پہلے ناک پھر پَیشانی اور یہ خاص خَیال رکھئے کہ ناک کی صِرف نوک نہيں بلکہ ہڈّی لگے اور پَیشانی زمین پر جَم جائے، نظر ناک پر رہے، سَجدہ سِمَٹ کر کیجئے یعنی بازو کروٹوں سے، پیٹ ران سے، ران پِنڈلیوں سے اورپِنڈلیاں زمین سے ملا دیجئے، اور دونوں پاؤں پیچھے نکال دیجئے۔ اب کم از کم تین بار سَجدے کی تسبیح یعنی سُبْحٰنَ رَبِّیَ الْاَعْلٰی (پاک ہے میرا پروردگار سب سے بُلند) پڑھئے پھر سر اس طرح اُٹھائیے کہ پہلے پیشانی پھر ناک پھر ہاتھ اٹھیں۔ دونوں پاؤں سیدھی طرف نکال دیجئے اور اُلٹی سُرِین پر بیٹھئے اور سیدھا ہاتھ سیدھی ران کے بیچ میں اور اُلٹا ہاتھ اُلٹی ران کے بیچ میں رکھئے۔ دونوں سجدوں کے دَرمیان بیٹھنے کو جَلسہ کہتے ہیں۔ پھر کم از کم ایک بار سُبْحٰنَ اللہ کہنے کی مقدار ٹھہرئیے (اِس وَقفے میں اَللّٰھُمَّ اغْفِرْلِی یعنی اے اللہ عزوجل میری مغفرت فرما کہہ لین امُستَحَب ہے) پھر اَللہُ اکْبَر کہتے ہوئے پہلے سَجدے ہی کی طرح دوسرا سَجدہ کیجئے۔ اب اُسی طرح پہلے سر اُٹھائیے پھر ہاتھوں کو گُھٹنوں پر رکھ کر پنجوں کے بل کھڑی ہو جایئے۔ اُٹھتے وقت بِغیر مجبوری زمین پر ہاتھ سے ٹیک مت لگائیے۔ یہ آپ کی ایک رَکعَت پوری ہوئی۔ اب دوسری رکعت میں بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیۡمِ پڑھ کر اَلحَمد اور سورۃ پڑھئے اور پہلے کی طرح رُکوع اور سجدے کیجئے دوسرے سجدے سے سر اُٹھانے کے بعد دونوں پاؤں سیدھی طرف نکال دیجئے اور اُلٹی سُرِین پر بیٹھئے اور سیدھا ہاتھ سیدھی ران کے بیچ میں اور اُلٹا ہاتھ اُلٹی ران کے بیچ میں رکھئے۔ دو رَکعَت کے دوسرے سَجدے کے بعد بیٹھنا قَعدَہ کہلاتا ہے۔ اب قَعدہ میں تَشَہُّد (تَ۔شَہْ۔ھُد) پڑھئے:

اَلتَّحِیَّاتُ لِلّٰہِ وَ الصَّلَوَاتُ وَ الطَّیِّبٰتُ ط اَلسَّلَامُ عَلَیْکَ

تمام قَولی، فِعلی اور مالی عبادتیں اللہ عَزَّوَجَلَّ ہی کیلئے ہیں۔ سلام ہو آپ پر

اَیُّھَا النَّبِیُّ وَ رَحْمَۃُ اللہِ وَبَرَکَا تُہٗ ط اَلسَّلَامُ عَلَیْنَا وَعَلٰی

اے نبی! اور اللہ عَزَّوَجَلَّ کی رَحمتیں اور بَرَکتیں۔ سلا م ہو ہم پر اور اللہ عَزَّوَجَلَّ کے

عِبَادِ اللہِ الصّٰلِحِیْنَ ط اَشْھَدُاَنْ لَّا ٓاِلٰـہَ اِلَّا اللہُ

نیک بندوں پر، میں گواہی دیتا ہوں کہ اللہ عَزَّوَجَلَّ کے سوا کوئی معبود نہیں

وَ اَشْھَدُاَنَّ مُحَمَّدًا عَبْدُہٗ وَ رَسُوْلُہ ط

اور میں گواہی دیتا ہوں کہ محمد (صلی اللہ تعالٰی علیہ واٰلہٖ وسلَّم) اس کے بندے اور رسول ہیں.

جب تشہد میں لفظ ’’لا‘‘ کے قریب پہنچیں تو سیدھے ہاتھ کی بیچ کی اُنگلی اور اَنگوٹھے کا حَلقہ بنا لیجئے اور چھنگلیا (یعنی چھوٹی اُنگلی) اور بِنْصَر یعنی اس کے برابر والی اُنگلی کو ہتھیلی سے ملا دیجئے اور (اَشْھَدُ اَلْ کے فوراً بعد) لفظِ ’’لا‘‘ کہتے ہی کلمے کی اُنگلی اٹھائیے مگر اس کو اِدھر اُدھر مت ہلائیے اور لفظ ’’اِلَّا‘‘ پر گرا دیجئے اور فوراً سب اُنگلیاں سیدھی کر لیجئے۔ اب اگر دو سے زِیادہ رکعتیں پڑھنی ہیں تو ’’اَللّٰہُ اَکْبَر‘‘ کہتے ہوئے کھڑے ہو جائیے۔ اگر فرض نماز پڑھ رہے ہیں تو تیسری اور چوتھی رکعت کے قیام میں ’’بِسْمِ اللہِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِیْمِ‘‘ اور ’’ اَلْحَمْد‘‘ شریف پڑھئے! سورت ملانے کی ضرورت نہیں۔ باقی اَفعال اِسی طرح بجا لائیے اور اگر سُنَّت ونَفْل ہوں تو’’سورۂ فاتِحَہ‘‘ کے بعد سُورت بھی مِلائیے (ہاں اگر اِمام کے پیچھے نَماز پڑھ رہے ہیں تو کسی بھی رَکعت کے قِیام میں قرائَت نہ کیجئے خاموش کھڑے رہیے ) پھر چار رَکعَتیں پوری کرکے قعدۂ اخیرہ میں تَشَہُّد کے بعد دُرُودِ ابراہیم علیہ الصلوٰۃ والسلام پڑھئے:

اَللّٰھُمَّ صَلِّ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّ عَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا

اے اللہ عزوجل! دُرود بھیج ( ہمارے سردار ) محمد پر اوران کی آل پر جس طرح تُونے

صَلَّیْتَ عَلٰٓی اِبْرٰھِیْمَ وَ عَلٰٓی اٰلِ اِبْرٰھِیْمَ اِ نَّکَ

دُرُود بھیجا (سیِّدُنا) ابراہیم پر اور انکی آل پر، بے شک تو

حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ ط اَللّٰھُمَّ بَارِکْ عَلٰی مُحَمَّدٍ وَّ

سَراہا ہوا بزرگ ہے۔ اے اللہ عَزَّوَجَل!برکت نازِل کر ( ہمارے سردار ) محمد پر اور

عَلٰٓی اٰلِ مُحَمَّدٍ کَمَا بَارَکْتَ عَلٰٓی اِبْرٰھِیْمَ

ان کی آل پر جس طرح تُو نے بَرَکت نازِل کی (سیِّدُنا) ابراہیم

وَ عَلٰٓی اٰلِ اِبْرٰھِیْمَ اِنَّکَ حَمِیْدٌ مَّجِیْدٌ ط

اور انکی آل پر، بے شک تو سَراہا ہوا بزرگ ہے۔

کو ئی سی دُعائے ماثُور ہ پڑھئے ، مَثَلاً یہ دُعا پڑھ لیجئے :

اَللّٰھُمَّ رَبَّنَآ اٰتِنَا فِی الدُّنْیَا حَسَنَۃً

اے اللہ !اے رب ہمارے ! ہمیں دنیا میں بھلائی دے

وَّ فِی الْاٰخِرَۃِ حَسَنَۃً وَّ قِنَا عَذَابَ النَّارِ

اور ہمیں آخرت میں بھلائی دے اور ہمیں عذابِ دوزخ سے بچا۔

پھر نماز ختم کرنے کے لئے پہلے دائیں کندھے کی طرف منہ کر کے ’’اَلسَّلاَمُ عَلَیْکُمْ وَرَحْمَۃُ اللہِ‘‘ کہئے اور اسی طرح بائیں طرف اب نَماز ختم ہوئی۔

وڈیو یہاں سے ڈاؤن لوڈ کریں۔

اسلامی بہنوں کی نماز مکمل رسا لہ یہاں سے ڈاؤن لوڈ کریں۔

اس کتاب میں آپ پڑھ سکیں گی، وضو کا طریقہ، غسل کا طریقہ، تَیَمُّم کا طریقہ، اذان کا جواب دینے کا طریقہ، نماز کا طریقہ، استنجا حیض و نفاس کا بیان اور عورتوں کی پچیدہ بیماریاں اور ان کا علاج


یہ بھی پڑھیں

نَماز کی 6 شرائط ,7 فرائض، واجبات اور سجدہ سہو کا بیان